Hyderabad

Malaysia bans Israeli players from world squash event

مقامی میڈیا نے منگل کو رپورٹ کیا کہ ملائیشیا کے حکام نے 7 دسمبر سے شروع ہونے والی عالمی اسکواش چیمپئن شپ میں شرکت کے لیے اسرائیلی کھلاڑیوں کو ویزا دینے سے انکار کر دیا ہے۔

یہ انکشاف ورلڈ اسکواش فیڈریشن (ڈبلیو ایس ایف) کی جانب سے کیا گیا ہے، جس کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ “اسے آگاہ کیا گیا ہے کہ، فی الحال، ملائیشیا کے حکام نے اسرائیل اسکواش ٹیم کو ویزے فراہم کرنے کو قبول نہیں کیا ہے”۔

ڈبلیو ایس ایف نے مزید کہا کہ وہ ملائیشیا کی اسکواش باڈی کے ساتھ رابطے میں ہے اور امید ظاہر کی ہے کہ “ایک منصفانہ اور عملی حل حاصل کیا جا سکتا ہے”۔

ٹورنامنٹ کا انعقاد نیوزی لینڈ میں ہونا تھا، لیکن کوویڈ 19 کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے نیوزی لینڈ میں عائد پابندیوں میں سختی کے باعث اسے ملائیشیا منتقل کر دیا گیا۔

واضح رہے کہ ملائیشیا کے اسرائیل کے ساتھ کوئی باضابطہ سفارتی تعلقات نہیں ہیں اور یہودی ملک کے لوگ جنوب مشرقی ایشیائی ملک کا دورہ کرنے کے قابل نہیں ہیں۔

اسرائیلی غصہ

اسرائیل اسکواش ایسوسی ایشن نے کہا کہ اگر ورلڈ سوشل فورم اس مسئلے کو حل نہیں کر سکتا تو وہ سوئٹزرلینڈ میں کھیلوں کے ثالثی کی عدالت سے رجوع کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔

ایسوسی ایشن کے چیئرمین Aviv Bushinsky نے کہا، “یہ شرم کی بات ہے کہ وہ کھیلوں کو سیاست کے ساتھ ملا رہے ہیں۔”

ملائیشیا کا فلسطینی کاز کی حمایت میں اہم کردار ہے۔ یہ ہمیشہ اسرائیلی قبضے کو ختم کرنے اور فلسطینی عوام کو ان کے تمام حقوق دینے کا مطالبہ کرتا ہے۔ یہ اسرائیلی قبضے کے ساتھ معمول پر آنے کو بھی مسترد کرتا ہے۔

حماس کی طرف سے تعریف

بدلے میں، حماس نے ملائیشیا کے انکار کی تعریف کی، اور تحریک کے ترجمان عبداللطیف القانو نے ایک بیان میں کہا کہ یہ انکار قبضے کو معمول پر لانے کی مخالفت، فلسطینی عوام کی حمایت اور حمایت میں ملائیشیا کے مستقل اور اصل موقف کا اظہار کرتا ہے۔ ان کی استقامت کو مضبوط کرنا۔

سوشل میڈیا پر سرگرم کارکنوں نے ملائیشیا کے رویے کی تعریف کی، اسی وقت اسرائیلی قبضے کے ساتھ عرب ممالک کے معمول پر آنے کی مذمت کی۔

.

Related Articles

Back to top button
Enable Notifications    OK No thanks

Adblock Detected

Please Desable your Adblock to continue content.